Category : AStrology

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
Astrology With Sami
Lecture Number 3
علم نجوم میں استعمال ہونے والی اصطلاحات اور ابجد
(A B C D and TERMS USED IN ASTROLOGY)
السلام وعلیکم: Astrology With Sami میں خوش آمدید….!
عزیز طلباء اور ناظرین کرام علم نجوم پرآہمارا تیسرا لیکچر ہے جس میں ہم علم نجوم میں استعمال ہونےوالی اصطلاحات اوراختصارات بمعہ جامع اللغات پیش کریں گے.جن کا جاننا علم نجوم کےطالبعلموں کے لئےازبس ضروری ہے.
علم نجوم صرف اشیاء کی فطرت سے ہی بحث نہیں کرتا بلکہ اس کے خوابیدہ پہلوؤں سےبھی بحث کرتا ہےوہ پہلو جو ہمارے حواس خمسہ کے احاطے میں نہیں آتے ہیں.سوال یہ پیداہوتا ہے کہ علم نجوم کہاں سےآیا؟اس سوال کا جواب بہت آسان بھی ہےاوربہت مشکل بھی.تاہم یہاں طالبعلموں کو مختصراًیہ بتادینا کافی اور ضروری ہوگا کہ قدیم مصر کے بادشاہ اس علم کے امام تھے.علم نجوم ہماری علمی معلومات میں عظیم اضافہ کرتا ہے جسکی مدد سے ہم خوداپنا تجزیہ کرسکتے ہیں.علم نجوم کےامکانات اتنے ہی وسیع ہیں جتنی کہ زندگی.لیکن چونکہ یہ ایک مراسلاتی سائنس ہےجس میں ہم زورمرہ زندگی وکون ومکاں کی کاوشوں کا مطالعہ کرسکتے ہیں.زندگی کے مختلف شبعوں پر جتنا ہم اسکے صولوں کو آزمائیں گے اتنا ہی ہمیں اسکے مرتب ہونےوالےاثرات کااندازہ ہوگا.گوکہ علم نجوم کے مبتدیوں کےلئے علم ہیئت کا جاننا بہت ضروری ہے کیونکہ یہ بنیادی سائنس ہے اس لئے تمام منحجمیں کے لئے علم ہیئت کے بنیادی حقائق کا جانناازبس ضروری ہے.
میرا خیال ہے کہ جب تک اس علم کےاصطلاحات اوراختصارات کا علم مبتدیوں کونہ ہوگا.اس وقت تک وہ اس علم کو مکمل طور پر نہ سیکھ سکیں گے اور نہ ہی آئندہ اس سےاستفادہ حاصل کرسکیں گے.
علم نجوم میں استعمال ہونیوالے اصطلاحات اورایجازات کو سہل طریقے سے بیان کیا جارہے ہے.انہیں ذہن نشین کرلیں تو علم نجوم کو سیکھنے میں آپکو بڑی سہولت ہوجائے گی.
الف:یہ علم نجوم اور عربی حروف تہجی کا پہلا حرف ہے.
ایرنزراڈ:اسےایرنزبیئرڈ بھی کہتے ہیں.یہ ایک قسم کا سیارہ ہے.
انحراف:یہ لفظ علم ہیئت میں استعمال ہوتا ہے اس کا اثر سال میں تمام سیارگان پر ہوتا ہے جوایک دائرے کی شکل میں ساڑھے 40 انچ کے قطرمیں زمین کے متوازی ہوتے ہیں.
ماہر:اسےفاضل یا ہنرمند بھی کہتے ہیں.مرادایسا نجومی ہے جس نے علم نجوم کا کورس مکمل کیا ہو،
ابد:طویل مدت.
دوستی: سورج کو ہم کہہ سکتے ہیں کہ تمام سیارگان سے قرابت رکھتا ہے. مریخ زہرہ سےدوستی رکھتا ہےلیکن زہرہ اورمشتری کی دوستی زیادہ قوی ہوتی ہے زہرہ اورعطاردکی بھی دوستی ہوتی ہے.
نحس اثر:سیاروں کےاورگھروں کےدرمیان نحس نظرات سےپیداہوتاہےجیسےنوین درجےکےتمام زوائیےنحس یا تربیع کہلاتےہیں.
ہوا:ہمارےکمرےمیں موجودگیسوں کو کہتے ہیں جو ہمارےماحول پراثراندازہوتی ہیں.
بادی بروج:یہ جوزا،میزان اوردلوہیں.انہیں ذہنی یادماغی برج بھی کہا جاتا ہے.یہ دائرۃالبروج کےانسانی علامات کہلاتے ہیں.مطابقت سکون اور توازن کا مثلث بناتےہیں.
کیمیا ساز: کیمیا گری بھی کہتے ہیں.فطرت کی کیمیا گری.
ایکس سیون:ایک ثابت سیارہ ہے جسکی وسعت تیسرےدرجےکی ہے..
تقویمِ:دنیا کی سب سے پہلے تقویم بطلیموس کی “المجستی” ہے.حضرت عیسٰی کی پیدائش سے ڈیڑھ ہزارسال قبل ابرخس نے بھی ایک تقویم بنائی تھی.
مسلمانوں کی سب سے پہلی تقویم عبدالرحمان بن عمرالصوفی الرازی نے 924ء میں بنائی تھی.1150ء میں سلیمان جارچس نے بھی ایک تقویم شائع کی تھی.پندرھوں صدی میں مرزاالغ بیگ گور کانی نے بھی ایک تقویم شائع کی تھی.بیسویں صدی کی مقبول ترین تقاویم رافیل اور زاوکیل کی ہیں.رافیل کی تقویم پہلی مرتبہ 1820ءمیں شائع ہوئی تھی جبکہ زاوکیل کی تقویم 1830ء میں شائع ہوئی تھی.
عربی تقویم کی طرز پر پا کستان میں پہلی مرتبہ سرمدی تقویم 1985ءمیں شائع ہوئی تھی. جو کہ مشہور معروف منجم ڈاکڑ فرقان سرمد کی علم دوستی کامنہ بولتا ثبوت ہے.پاکستان میں علم نجوم کو عام لوگوں تک پہنچانے والوں میں آپ کا نام سرفہرست ہے.
علم نجوم کی ابجد: علم نجوم کی ابجد کی علامتیں ہیں جو مکمل معنی کا اظہار کرتی ہیں جس میں آٹھ سیارے اور شمس و قمر شامل ہیں.انکے نام یہ ہیں.
شمس(ش) قمر(ر) عطارد(ط) زہرہ(ہ) نیچچون(چ)
مریخ(خ) مشتری(م) زحل(ل) یورانس(نس) پلوٹو(پ)
علم نجوم میں بارہ بروج ہیں جن کے نام اور علامات یہ ہیں.
حمل ثور جوزا سرطان
اسد سنبلہ میزان عقرب
قوس جدی دلو حوت
نظرات کے نام،درمیانی فاصلہ اور علامتیں یہ آپ کو لازمی یادہونی چاہئیں ان کو بھی نوٹ کرلیں.
تسعین (فاصلہ30درجہ) تسدیس (فاصلہ60درجہ)
تثمین (فاصلہ45درجہ) تربیع (فاصلہ90درجہ)
تثلیث (فاصلہ120درجہ) مقابلہ (فاصلہ180درجہ)
خماسی (فاصلہ135درجہ) قران (فاصلہ0 درجہ)
ارتفاع: یعنی بلندی، سیارگان کی بلندی
محیط: تمام اطراف سے گزرنا
فرشتے: سیارگان کے فرشتے یہ ہیں.
شمس(میکائیل) قمر(جبرائیل) عطارد(رافیل) زہرہ(اینائیل)
مریخ (سیمائیل) مشتری(نراکیل) زحل(کیسئیل) …………..
زاوئیے: چارمتقلب نقاط ، یعنی پہلا ، چوتھا ، ساتواں اور دسواں گھر فطری زائچے کا ، جنہیں طالع، نقطہ عروج، مغربی زاویہ اور سمت القدم بھی کہا جاتا ہے.
جبلی نفرت: دواجسام جو مختلف مقنا طیسی کشش کی وجہ سے آپس میں موافقت نہیں رکھتے ہوں.
نقطہ محور: سیارے کا نقطہ محور جو سورج سے کا فی فاصلے پرہو.
جامع کلمہ: دانش مندوں کا قول.
انتہا: کسی سیارے یا محور کا وہ مقطہ جوزمین سے بہت دوری پر ہو.
اپریل: نجومی سال کا پہلا مہینہ.
دلو: یہ دائرۃالبروج کا گیارہوں برج ہے. یہ بہت اہم اور کچھ پراسرار قسم کا برج ہےیہ انسانی جسم میں ٹانگوں، کہنیوں اور خون پر حکمران ہے.
حمل: یہ صفردرجہ سے 30 درجہ طول البلد تک ہوتا ہے دائرہ البروج کا پہلا برج ہے انسانی جسم میں سر اور چہرے سے متعلق ہے.
طالع: یہ زائچےکا پہلاگھر ہو تا ہے زائچہ کا طالع بہت باقوت نقطہ ہوتا ہے.
طالعی: وہ سیارے جو دسویں گھر سے مشرق کی جانب چوتھے گھر میں طلوع ہوئے ہوں.
نظرات: یہ دراصل درجات کے مخصوص نمبر ہوتے ہیں ہرانک اپنی ایک علامت اور صفت رکھتا ہے.دائرہ البروج360 درجات پر مشتمل ہوتا ہے اگر ہم اس دائرے کے کسی نقطے کو لے کر اس کی مخصوص طریقے سے پیمائش کریں تو نجومی نظرات کا علم ہوتا ہے.
نظرات کی فطرت کو جانچنے کے لئے ان برجوں کی فطرت کو دیکھنا پڑے گا جن سے کہ نظر بنتی ہے.
سیارچے: ایک ہزار سے اوپر ایسے اجسام ہیں جنہیں سیارچے کہا جاتا ہے جو مشتری اور مریخ کے درمیان نظر آتے ہیں.
کوکبی:مادےکی اعلٰی صفات جوطبعی زمین پراثراندازہوتی ہے.
کوکبی جسم : یہ ایک ایسا جسم ہے جو کوکبی روح رکھتا ہے یہ جذبات پراثرانداز ہوتا ہے اور آبی بروج پر حکمران ہے.
کوکبی نور: نہ نظرآنےوالےحصے جو ہماری کائنات کےگرد لٹپے ہوئے ہیں یہ جسم انسانی کے ذہنی ارتعاش اورجذبات سے منعکس ہوتے ہیں.
الصوفی: ابوالحسین عبدالرحمٰن بن عمرالصوفی الرازی کو علم ہیئت وعلم نجوم کا باپ مانا جاتا ہے.جن کی تحقیقات پر موجودہ علم نجوم وعلم ہیئت کی بنیاد ہے.
البیرونی: ابوریحآن محمد بن احمدالبیرونی الخوارزمی مشہورمسلمان منجم تھے جنہوں نےاہل ہند کونجوم کے نئےباب سے روشناس کروایاتھا.
اصطرلاب:ایک آلہ جسکی مدد سےستاروں کی بلندی کااندازہ کیا جاسکتاہے.
علم نجوم:یہ وہ سائنس ہے جس میں ملکوتی اجسام کا انسان کی سیرت پراثرات کو مطالعہ کیا جاتا ہےاورمادی دنیا میں اسکےاظہارکودیکھا جاتا ہے یہ علم،علم ہئیت کی روح ہے.
اس علم کو سات مختلف حصوں میں تقسیم کیا گیا ہے.
(1).مخفی یاباطنی (2). پیدائش (3). طبی (4). وقتی (5). قومی (6).موسمی (7).روحانی
ان میں ہر ایک اپنا ایک مخصوص علم رکھتا ہے.
ہیئت دان: ایسےافرادجوستاروں کی درجہ بندی وغیرہ کرتے ہیں.
علم ہیئت : بنیادی طورپرعلم نجوم اورعلم ہیئت ایک ہی سائنس ہیں.
لیکن علم ہیئت سیارگان کے فاصلے،وسعت،کمیت،مرکبات اورحرکات وغیرہ کواجاگرکرتاہے.
ب:حروف تہجی کادوسرا حرف ہے یہ گھرکی علامت ہے.
اہل بابل: ماضی میں علم نجوم کےماہرتھے یہ علم ان کے مذہب میں شامل تھا.
بیکسن راجر: ایک فرانسیی ماہرہ تھا وہ کیمیا گری اور طاسما تی آرٹ کےاستاد کی حیثیت سے مشہورہواتھااس کا نام علم نجوم کےساتھ بھی لیاجاتا ہےاس لئے کہ شائدوہ فلسفیانہ نجوم پریقین رکھتا تھا.
بارڈیسانس:ایک عظیم نجومی تھا جس نے مشرق کےپراسرارعلوم کی پیروی کی اس نے سات سیاروں کی روح کو منسوب کیا ہےاس کی بنیاد کواونچےدرجےسےشروع کیاہےاوروہ روحانی حشرنشرکوتسیلم کرتاتھا لیکن جسم کے جی اٹھنےکامخالف تھا جیسا کہ چرچ کےپادری کہتے ہیں.
تقویم میں اس نے منطقتہ البروج کے برجوں کی پیدائشی گھنٹےمیں اہمیت ظاہرکی ہے اورباضابطہ سات سیاروں کا اعلان کیا ہے وہ شمس کوزندگی کا باپ اورقمرکوزندگی کی ماں کہتا تھا.
بانجھ بروج: جوزا. اسد اور سنبلہ بانجھ بروج کہلاتے ہیں.
بیسن ٹائن جیمر: ایک اسکاچ نجومی جو سولہویں صدی میں تھا اس نے 1562ء میں سررابرٹ میلویل کو پیشگوئی کرکے “MARY” کی موت کے بارے میں بتایا تھا.جواسکاٹ کی بدقسمت ملکہ تھی.
حیوانی بروج:حمل.ثور.اسد.قوس اور جدی ہیں.
دائرہ المشتری: کیثرتعدادمیں دھندلی پٹی یا قطعہ سطح مشتری کے متوازی نظرآتے ہیں اگراسکے موسم بادل والے ہیں تو اسکی گردش میں یہ قوت متوازی قطاریں لگاتے ہیں اس سیارے کا تاریک حصہ نسبتاً کھلی فضا میں دیکھاجاسکتا ہے.
فاہدہ مند: زہرہ اورمشتری دوفائدہ مند سیارے ہیں.
مفیدنظرات: تثلیسث،تسدیس اور تسمین ہیں.
مفیداثرات: یہ مفیدسیاروں اور نظرات کی وجہ سے پیدا ہوتے ہیں.
محاصرہ:ایک سیارہ دونحس سیاروں کے درمیان ہوتواسےمحاصرہ کہتےہیں.یہ ہمیشہ انتہائی نحس صورت ہوتی ہےایک سیارہ مریخ اورزحل کے درمیان نحس ہوتا ہے لیکن جب زہرہ اورمشتری کے درمیان ہوتو بہت سعد ہوتا ہے.
ذوجسدین بروج: یہ جوزا.قوس اورحوت ہیں انہیں عام طور پر دوہرے جسم والے بروج بھی کہتے ہیں.
پیدائشی نشان : تمام پیدائشی نشان اورداغ جو پیدائش کے وقت جسم پر ہوتے ہیں انہیں پیدائش کےوقت سیارگان کی پوزیشن سے منسوب کردیا جاتا ہے.
پیدائشی وقت: وہ لمحہ جب شیرخواراس طبعی دنیا میں پہلی سانس لے تمام مبتدی اورعلم نجوم کےماننےوالوں کو چاہیے کہ خاندان کے تمام افرادکا پیدائش کا وقت نوٹ رکھا کریں.
ناقابل برداشت بروج: تمام آتشی بروج تلخ ہوتے ہیں.یعنی حمل،اسداورقوس.
شمالی بروج: چھ شمالی بروج حمل، ثور،جوزا،سرطان،اسداورسنبلہ ہیں.
ت: عربی حروف تہجی کا تیسرا حرف ہے.
زیروبم:ان گھروں کو کہا جاتا ہے جو زاویئے سے گر جاتےہیں یہ گھر تیسرے،چھٹے،نویں اور بارہویں ہیں.اس پوزیش کو کمزور کہا جاتا ہے وقتی زائچےمیں ان گھروں میں سیارے تاخیرکا سبب ہوتے ہیں.
قدیم شاہی نقیب کا عصائےاقتدار: یہ کائناتی،کوکبی یا ہسئیتی کہلاتا ہے.یہ روحآ نیت اور طبیعاتی علامت بھی ہے اس کی صفت تبدیلی لانا ہے بنیادی طور پر یہ تین سروں والاسانپ تھا لیکن اب یہ دو سانپوں کا جریب دوہری گولائی میں ہے اسے جریب عطارد بھی کہتے ہیں علم ہئیت کی روسے اس کے سراوردم نقطہ گرہن کو ظاہر کرتے ہیں جہاں دونوں شمس اورقمرایک دوسرے سے ملتے ہیں.
کیلنڈر: ایسارجسڑجس میں دنوں،ہفتوں،مہینوں اور سال کے بارےمیں بیان ہوتا ہے.
سرطان:دائرۃالبروج کا چوتھا برج: سورج اس برج میں 21 جون کو داخل ہوتا ہے یہ 90 درجہ اور 120 درجہ کے درمیان واقع ہوتا ہے.مجمع سرطان،جوزا اور اسد کے درمیان ہوتا ہے.اسمیں کوئی بھی سیارہ تیسرے درجے سے زیادہ با قوت نہیں ہوتا ہے سرطان ایک آبی اور منقلب برج ہے اور چھاتیوں پرحکمران ہے.
جدی: دائرۃالبروج کا دسواں برج: فطرتاً خآکی اورمنقلب ہے.یہ موسم سرما کا برج ہے.جب سورج تقریباً21 دسمبر کو یہاں داخل ہوتا ہے. Astrology سے متعلق ہماری آج کی گفتگو یہیں تمام ہوتی ہے.انشا اللہ اگلے لیکچر میں اس موضوع کو مکمل کریں گے اورآپکو مذید نئی نئی معلومات سےآگاہ کریں گےفی الحال اجازت دیئجےاس دعا کے ساتھ کہ اللہ تعالٰی آپ کو آسانی عطا فرمائے اور آسانیاں بانٹنے کی تو فیق عطا فرمائے.امین.اللہ حآفظ.


Leave a Reply

SYED ZAHOOR HASSAN SAMI & ADNAN HASSAN SAMI….SHAJRA SHARIF

WhatsApp chat