Category : Chromopathy

WORLD OF KNOWLEDGE
CHROMOPATHY WITH SAMI
LECTURE NUMBER 2
CHROMOPATHIC PHARMACY

رنگوں سے دواؤں کی تیاری
السلام واعلیکم:ورلڈآف نالج میں خوش آمد ید —-!
عزیز طلباءوطالبات پہلے لیکچر میں نے کروموپیتھی کا تعارف بیان کیا تھا آج ہم یہ بتائیں گے کہ کروموپیتھی میں رنگ کی تشخیص کیسے کی جاتی ہے اور کون کون سے رنگ کون کون سی بیماریوں میں کارمد ییں نیز رنگوں سےدواؤں کی تیاری کیسے کی جا تی ہے.طبی نقطہ نظرسے یہ معلوم کرنے کےلئے کہ انسان کے جسم میں کسں رنگ کی کمی یا بیشی واقع ہوئی ہے اس شخص کی آنکھوں کا سفید حصہ، ناخنوں کا رنگ، پیشاب کا رنگ اور اجابت کے رنگ کا جائزہ لینا چا ہئے.اب یہاں پہلے میں آپ کو سات بنیادی رنگ اور ان سے منسوب کواکب بتاتا ہوں تا کہ آئندہ علاج میں دشواری نہ ہواورآپ سمجھ جائیں کہ کونسا مرض کس کوکب یعنی سیارے سے منسوب ہے.
رنگ کوکب انگریزی نام
سفید قمر WHITE
سرخ مریخ RED
نارنجی شمس ORANGE
زرد(پیلا) زہرہ YELLOW
سبز عطارد GREEN
نیلا زحل BLUE
بنفشی(جامنی) مشتری VIOLET
کسی رنگ کی انسانی جسم میں کمی یا بیشی سے پیدا ہونے اثرات کی تفصیلات یہاں مکمل بیان کرنا تو مشکل ہے لیکن میں مختصراً آپ کو بتاتا ہوں کہ کسی رنگ کی کمی بیشی سے انسانی جسم میں کیا اثرات پیدا ہوں سکتے ہیں.
سفید رنگ: مرض ایڈز، کینسر، خون کی کمی،مرگی، دمہ ، قولنج، نسوانی بیماریاں، غشی، ہیموگلوبین کی کمی، امراض قلب، گردےکی پتھری، جسم کا بایاں حصہ، حیض کی شکایات، دماغی خلل، پتہ کی پتھری، رنگ ورم،جلدی امراض،چیچک، بےخوابی، سوجن، متلی،قے وغیرہ.

سرخ رنگ: اسقاط حمل، حآدثات، بخار، درد دل، اخراج خون، جلنا، کارنبکل، ہیضہ، کھانسی، ذیابیطس، اسہال،گیسڑک، ہرنیا، ہسڑیا، سوجن، خآرش، امراض مردانہ، صدمہ، یرقان وغیرہ وغیرہ.
نارنجی رنگ: سانس کی تکا لیف، دوران خون کے امراض، سردی لگنا، خناق، امراض قلب، حیات کی کمی، پاگل پن، مہاسے، لولگنا وغیرہ.
زرد(پیلا) رنگ: اٹھرہ، سینہ کی جلن، دبلا پن، امراض الات پوشیدہ، کوتاہ قامتی، آنت اور گردہ کی تکا لیف وغیرہ وغیرہ.
سبز رنگ: اعصابی شکایات، اندھاپن، امراض تنفس، رعشہ، حافظہ کی خرابی.درد.، جلن،پھوڑا، چہرے کا اعصابی درد، نظر کی کمزوری،منہ کے امراض، کام کی زیادتی سے ہونے والے امراض، فالج، نقرس، جوڑوں کا درد، بے خوابی، لکنت عام کمزوری وغیرہ.
نیلا رنگ: عرق النساء، جوڑوں کا درد، چھاتی کا کینسر، نقاہت، صفرا، تشنج، بہراپن، برص، بھینگاپن، بواسیر، مہاسے، طاعون، زہرکےاثرات بد وغیرہ.

نبفشی رنگ: البومن،دردکمر، بھوک کی زیادتی، موٹاپا، ہائی بلڈ پریشر،گردن کے عوارضآت، ذات الجنب، لو بلڈ پریشر، خون کا پانی ہونا وغیرہ وغیرہ. اس طریقہ علاج کے مندرجہ ذیل طریقہ سے آپ علاج کرسکتے ہیں.
1- جس رنگ کی کمی ہو گئی ہو اس رنگ کی بوتل بازار سے لے کر اس میں پانی یا شوگر آف ملک کی گولیاں بھر کر کم از کم چار گھنٹے روزانہ دھوپ میں رکھیں جب بوتل کے اندرخالی حصہ پر کچھ بوندیں نظر آنے لگیں تو سمجھیں کہ پا نی تیار ہے ایک شیشی کی قریب دوسری قرشیشی نہ رکھیں. گردوٍغبار سے بچائیں،شوگر آف ملک کی جگہ مصری بھی رکھ سکتے ہیں.

2- مختلف رنگ کے شیشوں سے لیمپ تیار کر لیں اور اندر بلب روشن کر کے جسم کے مخصوص مقامات پر ڈالیں تو علاج شافی ہوجائے گا.

3-مختلف رنگ کی بوتلوں میں السی کا تیل رکھ کر تیار کر لیں اور پھر انہیں استعمال کریں سرسوں کا تیل بھی تیار کرسکتے ہیں کوئی بھی سفید تیل سے تیاری کرسکتے ہیں.

4- پتھروں(نگینوں) کے ذریعہ بھی علاج کیا جاتا ہے جس رنگ کی ضرورت ہو اس رنگ کا نگینہ مریض یا مر یضہ کو پہنا دیں.

5-سبع کواکب سے منسوب دھاتوں سے بھی علاج کیا جا سکتا ہے.

یہ لیکچر کافی طویل ہوگیا لٰہذااسے یہیں ختم کرتا ہوں آئندہ لیکچر میں جسم انسانی کے ان 45 مقامات کی نشاندہی نقشوں کی مدد سے اور کواکب سے منسوب نگینے اوردھات کاذکر بھی کروںگا اور ان کے ساتھ ساتھ مزید کچھ حیرت انگیز انکشافات بھی.امید ہے کہ یہ تحقیقی اور معلوماتی سلسلہ آپ کو پسند آئے گا.اگر آپ بھی خدانخوستہ کسی بیماری میں مبتلا ہوں جس کا علاج نہیں ہورہا ہو تو آپ بھی پورے اعتماد کے ساتھ رابطہ کریں انشا اللہ چند یوم میں آپ کو شفاء کلی ہوجائے گی.
اس دعا کے ساتھ اجازت دیجئے کہ اللہ آپکو آسانیاں عطا فرمائے اور آسانیاں بانٹنے کی توفیق عطا فرمائے.آمین،اللہ


Leave a Reply

SYED ZAHOOR HASSAN SAMI & ADNAN HASSAN SAMI….SHAJRA SHARIF

WhatsApp chat