Category : Homeopathy

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
Homeopathy With Sami
Lecture Number 5
علم العلاج THERAPEUTICS
!معزز ناظرین و سامعین اور عزیز طلباء و طالبات السلام وعلیکم
میں خوش آمدید Homeopathy With Sami
علم العلاج ہومیو پیتھک طلباء طالبات کے لئے ایک نہایت اہم سبجیکٹ ہے اس سبجیکٹ میں ہم ہر ایک مرض کے تحت اس سے متعلقہ ادویات کی فہرست اور مخصوص علامات بیان کریں گے مختلف قسم کے امراض کی نوعیت اور ان کے اسباب کا تذکرہ تشخیص الامراض کے لیکچروں میں کیا جائے گا یعنٰی جن امراض کا یہاں علاج بتایا جائے گا ان کی نو عیت اور اسباب کو مکمل طور پر تشخیص الا مراض کے لیکچروں میں بیان کیا جائیگا تا کہ ڈاکٹر کو بیماری کی تشخیص کر نے میں سہولت رہے کیونکہ اگر تشخیص ہی غلط ہو جا ئے تو بہترین دوا بھی بے سود ثابت ہوتی ہے بلکہ بعض دفعہ تو مہلک ثابت ہوتی ہے ہو میو پیتھک دواؤں کے متعلق یہ ثابت مشہور ہے کہ تشخیص صحیح نہ بھی کی جائے تو یہ مرض کو کسی قسم کا نقصان نہیں پہنچا سکتیں غلط العام، غلط العلوام کے مصداق یہ ایک غلط بات ہے زہریلی دوائیں تو دور کی بات ہے بعض اوقات نباتاتی ادویات کا بے جا استعمال بھی نقصان دہ ثابت ہوتا ہے ڈاکٹر کو مریض کی غذا اور پرہیز کا بھی خیال رکھنا چاہئے چند ایک ضروری اصول میں آپ کو بتانا چاہتا ہوں
ڈآکٹر ہنیمن اپنی تحریر کردہ کتاب آرگینن کی دفعہ 172 میں لکھتے ہیں کہ ایسے امراض کے علاج میں جن میں صرف چند علامات ظاہر ہوتی ہیں بری دقت پیش آتی ہے مگر اس حالت میں ہومیو پیتھک ڈاکٹر کو زیادہ توجہ دینی چاہئے کیونکہ ایسے مرض کو دور کر نے میں وہ تکالیف بھی رفع ہو جاتی ہیں کو اعلٰی ترین ظریقہ علاجج میں‌ڈاکٹر کو پیش آتی ہیں
آرگینن کی دفعہ 176 میں لکھتے ہیں‌بعض ایسے امراض بھی ہوتے ہیں جو نہایت ہو شیاری سے معائنہ کر نے کے باوجود ایک یا دو شدید علامات ظاہر کرتے ہیں اور باقی علامات پوشیدہ رہتی ہیں
آرگینن کی دفعہ 177 میں لکھتے ہیں‌ایسے امراض سے جو کہ بہت کم ہوتے ہیں مقابلہ کرنے کیلئے ایسی دوا کی تلاش کی ضرورت ہے جوان چند نمایاں علامات کیلئے موزوں ہو
آرگینن کی دفعہ 259 میں فرماتے ہیں چونکہ ہو میو پیتھک دوا کی مقدار نہایت قلیل ہو تی ہے اس لئے علاج کے دوران مریض کو ایسی چیزیں استعمال نہ کروائیں جن میں دواؤں کا اثر موجود ہو یعنٰی جن کے سبب ہو میو پیتھک قلیل دوا کا اثر بدل جائے یا الٹ جائے
دوا کا استعمال کرتے وقت چند ایک باتوں کا خیال رکھنا نہایت ضروری ہے
دوا پینے سے قبل منہ کو صاف کر لینا چاہئے تاکہ اگر پان ، سگریٹ وغیرہ یا اس طرح کی کسی دوسری شے کا استعمال کیا ہو تو اس اثر دور ہو جائے
دوا کا بہترین وقت صبح کھانا کھانے سے قبل ہے مگر اس کا مطلب یہ نہیں کہ اگر مرض دن کے وقت شروع ہواہے تو دوسرے دن صبح کو دوا دی جائے دوا اور غذا کے درمیان کم از کم آدھا گھنٹے کا وقفہ ہو نا چاہئے البتہ اگر دوا کا اثر آلات انہضام معدہ وغیرہ کے اوپر کرنا ہوتو کھانا کھانے کے پانچ منٹ بعد دوا کا استعمال کراسکتے ہیں
دوا پینے کے بعد کم از کم ایک گھنٹہ تک پان ، سگریٹ یا اس طرح کی دوسری اشیاء سے بچنا چاہئے
دوران علاج جہاں تک ممکن ہو سکے الائچی ، خوشبودار مصالحہ اور عطروں وغیرہ کے استعمال سے پرہیز کریں
ہومیو پیتھک کے کیمفر کے مدر ٹنکچر خاص دوا کو باقی ادویات سے علیحدہ رکھنا چاہئے
ادویات کو شیشہ کے برتن میں رکھنا چاہئے اور استعمال کے دوران بھی شیشے یا چینی کا برتن بہتر ہے
دواؤں کو دھوپ اور تیز روشنی سے محفوظ رکھنا چاہئے اور تیز بو مثلاٌ مٹی کا تیل ،لہسن ، پیازاور عطر وغیرہ سے بھی بچانا چاہئے دھوئیں سے دوا کے مفید اثرات زائل ہو جاتے ہیں اس دعا کے ساتھ آج کے لیکچر ختم کر تے ہیں کہ اللہ تعالٰی آپ کو آسانیاں عطا فرمائے اور آسانیاں بانٹنے کی توفیق عطا فرمائے آمین اللہ حافظ


Leave a Reply

SYED ZAHOOR HASSAN SAMI & ADNAN HASSAN SAMI….SHAJRA SHARIF

WhatsApp chat